Page:Tota Kahani - Haidar Bakhsh Haidari.pdf/7

From Wikisource
Jump to navigation Jump to search
This page has not been proofread.


الولايا الضو 32 * احسان اس فضا کا کریمیں سے دریائے سخن کو اپنے ابرکرم سے گومبرقی بخش اور زبان کو اسٹیٹی محمد کے گویا کیا اور پیغمبر اثراندان کو بنگاروں کی شفاعٹل کپواسطے چتراللعالمپورن پل کیا کہ | جسکے سبب سے ارش و سمائے قیام پایاحتی وہ انھی کہ ایسا ہی مجید سے تلمبہ کیجے اتفریقہ | ویب کو بھیجا ہائے نئے۔ وصی اور امام اُس سے پیدا کے نتیجوں کوئی دین وایمان سے ری میں )2erیہات سے متروتازہ 枋 الستشگلزايجان ووチ s* و انتخلیق و آرتھ gerg 织e('85ޗާޓް بنجھرہے۔ نئے پرورشہاب کی ہو تو گل مہربانی اگرچہ بیان کیا سے اور کیا نہیں پر اسین کو کونسی کا نہیں ویسٹ بخش فلمیں تیاری شاہجہان آبادی تسلیمان جلسہ میں لاابالی ابراہیم بیان ہاویر بوتل محسین خان نازی پوریا دست گرفتها عبیمابھندان آبرویجنتخنوران موتی ہمہ تفویض وسیلے جلودکمل چاللہ علم ساحب والا شان جان گریٹ صاحب بہاولم اقبال کا سے مگجی تھوڑا ہونہارلیملسوائتی اپنے نوصلے کے عبارت فارسی میں بھی سکتا ہے لیکن بموجب لڑائی صاحب موصوف کے مطاللہ بڑی مطابق اسلامی بیوی کے حکومت میں گروہ ایران زبانهای غربیان و یکسانی زیرهٔ لوئیبانیایی الاغان شیرعباس شاه ایران بزرگ گاندانی مارکولیں ولزل گورنرجنرلالہادر وام اقبال کی محمد قادری کے طویلی اسے کاجول کا اخذ لوٹی امر ضیاء الدین کوئی ہے۔ زبان ہندی میں موافی سماورۂ ارووے معنے کے نثر میں ہوائتی |عبارت سلیس خوبے الفاظ کیجین ومرغوب سے ترجمہ کیا۔ اور علم اس کاطر کہانی رکھا تاہم اصب| قاسم نزول کی نیم میں جلد آوسے۔ اور چھان مہر ایس المغنی سے امید رکتناسب ہے۔